یورپی یونین سے علیحدگی، برطانیہ نے ترکی سے پہلا تجارتی معاہدہ کرلیاترکی اور برطانیہ تجارت کے آزادانہ معاہدے پر کل دستخط کریں گے، برطانوی وزیر تجارت لِز ٹروس کی تصدیق

لندن یورپی یونین سے علیحدگی کے بعد برطانیہ نے پہلا تجارتی معاہدہ ترکی سے کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق برطانوی وزیر تجارت لِز ٹروس نے کہا ہے کہ ترکی اور برطانیہ تجارت کے آزادانہ معاہدے پر کل دستخط کریں گے۔یورپین یونین سے علیحدگی کے بعد برطانیہ کا کسی دوسرے ملک کے ساتھ پہلا تجارتی معاہدہ ہوگا۔ برطانوی وزیر تجارت لِز ٹروس نے کہا کہ یہ معاہدہ دونوں ملکوں کے درمیان تجارت کو فروغ دینے میں معاون ثابت ہو گا۔
برطانوی وزیر تجارت کا کہنا تھا کہ جاپان، کینیڈا، سوئٹزرلینڈ اور ناروے کے ساتھ معاہدوں کے بعد وزارت تجارت نے یہ پانچواں سب سے بڑا تجارتی معاہدہ کیا ہے۔برطانیہ نے یکم جنوری کو بریگزٹ منتقلی کی مدت کے اختتام سے قبل 62 ممالک کے ساتھ تجارتی معاہدوں پر دستخط کیے ہیں۔
اس نے گزشتہ ہفتے یورپی یونین، اس کے سب سے بڑے تجارتی شراکت دار کے ساتھ بھی تجارتی معاہدہ کیا ہے۔
واضح رہے کہ 26 جون 2016 کو برطانوی عوام نے یورپی یونین سے علیحدگی کے حق میں ووٹ ڈال کر بریگزٹ کو کامیاب بنایا تھا تاہم یورپی یونین سے کس طرح نکلا جائے اس پر تقسیم اس قدر بڑھ گئی کہ بغیر معاہدے، یونین کو چھوڑنے کا ڈر خوف برطانوی عوام اور سیاستدانوں کو ستانے لگا۔بریگزٹ کا معاملہ کئی برس سے زیر بحث تھا اور بریگزٹ کی منظوری میں ناکامی پر برطانوی وزیر اعظم کو استعفی دینا پڑا تھا۔
جولائی 2016 میں وزیر اعظم بننے والی تھریسامے نے بریگزٹ معاہدے پر عوامی فیصلے کو عملی جامہ پہنانے کا وعدہ کیا تھا لیکن شدید مخالفت کی وجہ سے وہ اپنے وعدے کو پورا کرنے میں ناکام رہی تھیں جس کے بعد نو منتخب برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے اس کام کا بیڑا اٹھایا۔یاد رہے کہ برطانیہ نے 1973 میں یورپین اکنامک کمیونٹی میں شمولیت اختیار کی تھی تاہم برطانیہ میں بعض حلقے مسلسل اس بات کی شکایات کرتے رہے ہیں کہ آزادانہ تجارت کے لیے قائم ہونے والی کمیونٹی کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا جارہا ہے جس کی وجہ سے رکن ممالک کی ملکی خودمختاری کو نقصان پہنچتا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *