ہم آٹے کے نام پر مٹی پھانک رہے ہیں،عوام جائے تو جائے کہاں؟

ویب ڈیسک سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہے جس میں ویڈیو بنانے والا شخص گندم سے بھرے ٹرک میں کھڑا ہوا ہے اور بتا رہا ہے کہ یہ گندم ہم مل مالکان کو گورنمنٹ کی طرف سے دی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ اس کا آٹا بنا کر عوام کو کھلائیں۔جبکہ گندم کی ان بوریوں میں مٹی بھری ہوئی ہے اور خراب گندم ڈالی ہوئی ہے۔
ویڈیو بنانے والا شخص باری باری تین چار بوریوں سے خراب گندم کے نمونے نکال کر دکھاتااور کہتا ہے کہ یہ گندم ہمیں سرکار کی طرف سے دی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ اس کا آٹا بنا کر بیچو۔ویڈیو بنانے والا بار بار یہ کہتا ہے کہ یہ گندم ہمیں سرکار کی طرف سے بیچی گئی ہے اس میں ہمارا کوئی قصور نہیں ہے ہم کہیں باہر سے یہ گندم نہیں خرید کر لائے بلکہ حکومت کی طرف سے ہی دی گئی ہےاس میں مل مالکان کا کوئی قصور بہیں ہے کہ وہ یہ خراب گندم عوام کو کھلائے لیکن جب ہمیں حکومت نے یہ گندم بیچی ہے تو ہم یہ خراب گندم کو پیس کر عوام کو کھلا دیں گے۔ویڈیو بنانے والے نے کہا ہے کہ یہ ایک یا دو بوریاں نہیں بلکہ 12بوریاں ہیں جو ہمیں حکومت کی طرف سے دی گئی ہیں کہ یہ پیس کر عوام کو کھلائیں لہٰذا ہم مجبور ہیں کہ گندم کے نام پر یہ مٹی ہمیں عوام کو کھلانے کے لیے دی گئی ہے۔تاہم اس ویڈیو میں یہ واضح نہیں ہو سکا کہ یہ سندھ سرکار کی گندم ہے یا پھر پنجاب یا کسی اور صوبے کی۔کیونکہ سندھ سرکار نے بھی کچھ عرصہ قبل حکومتی ریکارڈ میں یہ بات درج کی تھی کہ کئی ہزار ٹن گندم گوداموں میں پڑی پڑی خراب ہو گئی ہے جس سے متعلق کچھ ذرائع نے یہ دعویٰ بھی کیا تھا کہ جس گندم کو سندھ سرکار نے خراب کر دیا تھا وہ گندم اصل میں اسمگل ہو گئی تھی۔کیا پتا یہ خراب گندم جو اب عوام کے پیٹ میں ڈالنے کے لیے مل مالکان کو دی گئی ہے یہ وہی سندھ سرکار کی گندم ہو اس پر تحقیق ہونی چاہیے اور وزیراعظم عمران خان کو نوٹس بھی لینا چاہیے کہ ہم عوام کے لیے حکومت کی طرف سے کس قسم کے تحفے دیے جارہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *