کورونا کی نئی قسم، سعودی عرب میں کرفیو نہیں لگے گا

کورونا وائرس کی نئی قسم کے پھیلاؤکے خطرات موجود ہیں لیکن اس وقت صورتحال ایسی نہیں کہ مملکت میں کرفیو لگایا جائے، سعودی حکام

اقوامی بارڈرز بند کیے گئے ہیں۔
لیکن ہمارا نہیں خیال کہ ہمیں اس سے زیادہ کوئی حفاظتی اقدامات کرنے چاہیے، اس وقت سعودی عرب میں کورونا کی صورتحال امریکہ اور برطانیہ کی نسبت کافی بہتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں ریاست میں کسی قسم کے کرفیو کا امکان نہیں ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ دنوں متحدہ عرب امارات کے بارے میں خیال کیا جارہا تھا کہ کورونا کیسز زیادہ ہونے کے باعث امارات میں لاک ڈاؤن لگایا جائے گا لیکن اس حوالے سےاماراتی حکام کی جانب سے بیان آیا تھا جس کے مطابق متحدہ عرب امارات میں کرفیو یا لاک ڈاون نافذ نہیں کیا جائے گا، اماراتی حکام کا کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں میں اگر کرونا کیسز رپورٹ ہوئے پھر انہیں 2 ہفتے کیلئے بند کیا جائے گا۔
غیر ملکی ذرائع کے مطابق متحدہ عرب امارات میں سعودی عرب کے مقابلے میں زیادہ کرونا کیسز رپورٹ ہوئے تھے۔چند ہی روز میں امارات میں رپورٹ ہونے والے کرونا کیسز کی تعداد دگنی ہوگئی ہے۔ اس تمام صورتحال میں افواہیں گردش کر رہی تھیں کہ متحدہ عرب امارات میں دوبارہ سے لاک ڈاون یا کرفیو نافذ کیا جا سکتا ہے۔ تاہم اب اس حوالے سے اماراتی حکام کی جانب سے وضاحت جاری کی گئی تھی۔ امارات کی نیشنل ایمرجنسی کرائسز اینڈ ڈیزاسٹر مینیجمنٹ اتھارٹی کی جانب سے واضح کیا گیا تھا کہ متحدہ عرب امارات میں دوبارہ لاک ڈاون یا کرفیو کا نفاذ نہیں ہوگا۔ جبکہ تعلیمی اداروں میں اگر کرونا کیسز رپورٹ ہوئے تو پھر تب ہی تعلیمی ادارے 2 ہفتے کیلئے بند کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *