’کسی کمپنی سے بلیک میل نہیں ہوں گے‘ وزیر اعلیٰ کا 2 دن میں لاہور کا کچرا اٹھانے کا الٹی میٹم رپورٹس ہیں کہ شہر کو کچرا خانہ بنا دیا گیا ، لاہور میں جگہ جگہ کچرا پڑا ہے، دو روز میں پورا شہر صاف نہ ہوا تو سخت ایکشن ہو گا ، سردار عثمان بزدار کا شہر میں صفائی کے ناقص انتظامات پر اظہار برہمی

لاہور وزیراعلیٰ پنجاب نے 2 دن کے اندر سوبائی دارالحکومت لاہور کو کچرے سے پاک کرنے کا الٹی میٹم دے دیا ، سردار عثمان بزدار کہتے ہیں کہ لاہور میں جگہ جگہ کچرا پڑا ہے، دو روز میں پورا شہر صاف نہ ہوا تو سخت ایکشن ہو گا۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت صفائی سے متعلق اجلاس ہوا ، جس میں انہوں نے شہر میں ناص صفائی کے انتظامات پر انتظامیہ پر اظہار برہمی کیا ، اس موقع پر سردار عثمان بزدار نے کہا کہ رپورٹس ہیں کہ شہر کو کچرا خانہ بنا دیا گیا ، کسی کمپنی سے بلیک میل نہیں ہوں گے۔جو کام نہیں کرتا اسے فارغ کر دیں ، تمام ادارے مل کر لاہور کو صاف بنائیں۔ یہاں واضح رہے کہ محکمانہ غفلت کے باعث لاہور شہر میں جگہ جگہ کوُڑے کے ڈھیر لگ گئے ہیں ، شہر بھر میں صفائی ستھرائی کا نظام درہم برہم ہونے سے شہری شدید مشکلات کا شکار ہیں جب کہ مختلف علاقوں میں بارش کے پانی میں کوڑا جمع ہونے سے تعفن اٹھنے لگا ہے، میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور کے علاقوں گڑھی شاہو ،دھرم پورہ، اسلام پورہ، گلبرگ، گلشن راوی اور اندرون شہر سمیت بہت سے علاقوں میں کوڑے کرکٹ کے ڈھیر لگے ہوئے ہیں، بدبو کے باعث مقامی رہائشیوں اور راہگیروں کو سخت پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔
لاہور میں واسا کی جانب سے ڈرین پائپ ڈالنےکےلیے مختلف مقامات پر سڑکیں کھودنے سے شہری شدید مشکلات کا شکار ہیں اور کھدائی کے باعث شہر میں ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہورہی ہے، سڑکوں کی خراب حالت کے حوالے سے واسا ترجمان کا کہنا ہے کہ ان کا کام پائپ لائن ڈالنا ہے، سڑک کی مرمت ضلعی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے، دوسری جانب لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا کہنا ہے کہ شہر میں صفائی آپریشن جاری ہے اور اب تک 24 ہزار ٹن کچرا اٹھا چکے ہیں۔
واضح رہے کہ گزشتہ دنوں ترک کمپنی کے ساتھ معاہدہ ختم ہونے کے بعد لاہور شہر میں صفائی ستھرائی کا نظام انتہائی سست روی کا شکار ہو گیا تھا۔ ایل ڈبلیو ایم سی اور واسا کی جانب سے شہر میں صفائی ستھرائی کے نظام کو کنٹرول میں نہ رکھنے سے شہر میں مختلف مقامات کوڑے کا ڈھیر بن گئے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *