پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سے متعلق خبریں قیاس آرائیاں ہیں ترجمان آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے وضاحت کر دی

اسلام آباد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق کچھ دیر قبل خبر آئی تھی جس پر عوام نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کو مہنگائی کے معاملے پر تنقید کا نشانہ بنایا ۔ تاہم اب آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کے ترجمان نے ان خبروں کی تردید کر دی ہے۔ ترجمان اوگرا کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں سے متعلق خبریں قیاس آرائیاں ہیں۔
انہوں نے کہا کہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے پٹرولیم مصنوعات میں اضافے یا رد و بدل سے متعلق پٹرولیم ڈویژن کو کوئی سمری ارسال نہیں کی۔ یاد رہے کہ اب سے کچھ دیر قبل پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق خبریں موصول ہوئی تھیں۔ جس میں بتایا گیا تھا کہ مہنگائی کے ستائے شہریوں پر حکومت نے ایک مرتبہ پھر سے پٹرول بم گرانے کی تیاریاں کر لی ہیں۔ان خبروں کے مطابق 16 جنوری سے پٹرولیم مصنوعات مزید مہنگی ہونے کا امکان ظاہر کیا گیا تھا۔ ذرائع نے بتایا کہ پٹرول 11 روپے 95 پیسے فی لیٹر تک منہگا ہونے کا امکان ہے۔ جبکہ ڈیزل کی قیمت بھی 9 روپے 57 پیسے فی لیٹر تک بڑھ سکتی ہے۔ ذرائع کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا تعین 30 روپے فی لیٹر لیوی کے حساب سے کیا گیا ۔ میڈیا رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں رد و بدل کی سفارشات پٹرولیم ڈویژن کو بھجوا دی ہیں۔پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کا حتمی فیصلہ وزارت خزانہ وزیراعظم کی مشاورت سے کرے گی۔ تاہم اب ترجمان اوگرا نے ان تمام خبروں کی تردید کر کے انہیں محض قیاس آرائیاں قرار دے دیا ہے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت میں اضافے کا رجحان برقرار ہے ۔ عالمی منڈی میں ایک ہفتے کے دوران قیمت 4 فیصد بڑھ گئی، عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 11 ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکی ہے۔ جس کے بعد پاکستان ميں پیٹروليم منصوعات کی قيمتوں ميں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے البتہ اس حوالے سے کوئی حتمی اعلان یا فیصلہ سامنے نہیں آیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *