پارٹی فنڈنگ کیس ، 19 سیاسی جماعتوں کو نوٹس جاری ، تفصیلات مانگ لی گئیں پیپلزپارٹی، پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کے فنڈز کی جانچ پڑتال پہلے ہی چل رہی ہے ، دیگر 19 سیاسی جماعتوں کو بھی نوٹس جاری کر رہے ہیں ، چیف الیکشن کمشنر

اسلام آباد الیکشن کمیشن نے پارٹی فنڈنگ کیس میں سیاسی جماعتوں سے 24 فروری تک جواب طلب کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق سیاسی جماعتوں کے فنڈز کی جانچ پڑتال کے حوالے سے پی ٹی آئی کی درخواست پرالیکشن کمیشن میں سماعت ہوئی ، چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے سماعت کی ، درخواست گزار کی طرف سے وکیل شاہ خاور الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے اور چھان بین سے متعلق پولیٹیکل فنانس ونگ نے رپورٹ الیکشن کمیشن میں جمع کرا دی۔بتایا گیا ہے کہ اس موقع پر الیکشن کمیشن نے درخواست گزار سے کہا کہ آپ رپورٹ کا جائزہ لے کر اپنے اعتراضات دائر کرسکتے ہیں ، پیپلزپارٹی، پی ٹی آئی اور مسلم لیگ ن کے فنڈز کی جانچ پڑتال پہلے ہی چل رہی ہے ، جب کہ 19 سیاسی جماعتوں کو بھی نوٹس جاری کر رہے ہیں۔ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے 19 سیاسی جماعتوں کو نوٹس جاری کردیے ، سیایس پارٹیوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ رپورٹ کا جائزہ لے کر اپنے اعتراضات دائر کر سکتے ہیں۔دوسری جانب الیکشن کمیشن نے حکمران جماعت کے خلاف جاری فارن فنڈنگ کیسز کی کارروائی تیز کرنے کا فیصلہ کرلیا ، تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر کی زیر صدارت الیکشن کمیشن کا اہم اجلاس اسلام آباد میں ہوا جس میں شرکاء کو فارن فنڈنگ کیس سے متعلق بریفنگ دی گئی ، اس موقع پر الیکشن کمیشن نے فارن فنڈنگ کیس کی سست روی پر تشویش کا اظہار کیا۔بتایا گیا ہے کہ اجلاس میں چیف الیکشن کمشنر نے ہدایت کی کہ اسکروٹنی کمیٹی ہفتے میں تین بار اجلاس بلائے ، جس پر اسکروٹنی کمیٹی نے بتایا کہ فریقین کے وکلاء پیش نہیں ہوتے جس کی بناء پر کیس التواء کا شکار ہے۔ ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن کے اجلاس میں پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد پر بھی غور کیا گیا اور الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ ایسا لگتا ہے پنجاب حکومت انتخابات کرانے میں سنجیدہ نہیں ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *