وزیراعظم نہ آئے تو لاشوں کے ساتھ اسلام آباد میں لانگ مارچ کریں گےمچھ میں شہدا کمیٹی کے ممبران آغاز رضا کا پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران اعلان

کوئٹہ سانحہ مچھ کے شہدا کے لواحقین کا دھرنا چھٹے روز بھی جاری ہے۔ مظاہرین نے لاشوں کی تدفین کو وزیراعظم عمران خان کی آمد سے مشروط کیا تھا لیکن وزیراعظم عمران خان نے ہزارہ برادری کو واضح پیغام دیتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کو اس طرح بلیک میل نہیں کیا جا سکتا، ہزارہ برادری آج ہی تدفین کرے میں گارنٹی دیتا ہوں آج ہی کوئٹہ جاؤں گا۔تاہم اب مچھ میں شہدا کمیٹی کے ممبران آغاز رضا نے اعلان کیا کہ وزیراعظم نہ آئے تو لاشوں کے ساتھ اسلام آباد میں لانگ مارچ کریں گے۔ گذشتہ روز بھی مچھ میں شہدا کمیٹی کے ممبران آغاز رضا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ حکومت کی طرف سے 3 نمائندے مذاکرات کے لیے آئے۔ شہدا کے اہل خانہ نے حکومتی نمائندوں کے سامنے اپنے مطالبات رکھے۔شہدا کے ورثا اپنی مرضی سے میتیں یہاں لائے۔ شہدا کے لواحقین جو کہیں گے اسی کو لے کر آگے چلیں گے۔ مجلس وحدت المسلمین کے مرکزی رہنما آغا رضا کا کہنا تھا کہ عمران خان کی آمد تک دھرنا جاری رکھیں گے۔ اگر عمران خان دھرنے میں نہ آئے تو شہداء کے جنازوں کے ساتھ اسلام آباد مارچ کریں گے۔ پریس کانفرنس سے خطاب میں امان اللہ کا کہنا تھا کہ ہم حکومت وقت کے خلاف ہیں نہ کسی سیاسی پارٹی کے۔ہم شہدا کے لواحقین کی مرضی کے پابند ہیں۔ دوسری جانب ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی کے رہنما عبدالخالق ہزارہ نے انکشاف کیا کہ شہدا کی تدفین پیر کو دن ایک بجے کرنے کا طے پایا تھا لیکن اگلے روز کچھ لوگوں نے زبردستی میتوں کو سڑک پر رکھ کر دھرنا دے دیا ۔ انہوں نے کہا کہ دھرنے میں کیے گئے مطالبات کا لواحقین سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ کچھ قوتیں دھرنے کا فائدہ اٹھانا چاہ رہی ہیں ۔۔ مذہبی عناصر کسی اور ایجنڈے کی تکمیل کے لیے شہدا کو استعمال کررہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *