ماہ کا ورک ویزا 48 گھنٹے میں ملے گا، وزارت داخلہ کا ویزا پالیسی میں تبدیلیوں سے متعلق بڑا فیصلہ

اسلام آباد وفاقی وزارت داخلہ نے ویزا پالیسی میں بڑی تبدیلی کرتے ہوئے کم مدتی ویزا کو سیکیورٹی کلیئرنس سے مستثنی قرار دے دیا ہے۔تفصلات کے مطابق وزارت داخلہ کی جانب سے ویزا پالیسی میں تبدیلیوں سے متعلق بڑا فیصلہ سامنے آیا ہے۔ وفاقی وزارت داخلہ نے غیر ملکی کے لیے پاکستان کے ویزا کے اجرا کے لیے اپنی پالیسیوں میں بڑی تبدیلی ہے، جس کے تحت کم مدتی ویزا کو سیکیورٹی کلیئرنس سے مستثنیٰ قرار دے دیا گیا ہے۔30 روز کا میڈیکل 3 ماہ کا ورک ویزا 48 گھنٹے میں مل سکے گا۔ طویل مدتی ورک ویزا کے لئے سیکیورٹی کلیئرنس اور سرمایہ کاری بورڈ کے لیٹر سمیت معاہدہ ملازمت، سی وی، کمپنی لیٹر، پروفائل اورایس ای سی پی رجسٹریشن لازمی درکار ہوگی۔
دستاویزات کے مطابق غیر ملکیوں کو تین ماہ تک کا میڈیکل ویزا 48 گھنٹوں میں جاری کیا جائے گا جسے ایک سال تک بڑھایا جا سکتا ہے تاہم ایک سال کے میڈیکل ویزے کے حصول کے لیے 30 روز میں سیکیورٹی کلیئرنس کی جائے گی،اور اس کے لیے درخواست گزار کی سیکیورٹی کلئیرنس اور متعلقہ اسپتال کے لیٹر لازمی قرار دئیے گئے ہیں۔غیر ملکی پاکستان میں ورک ویزا پر بھی آ سکیں گے۔قلیل المدتی ورک ویزا سیکیورٹی کلئیرنس سے مشروط نہیں ہو گا۔تین ماہ کے لیے ورک ویزے میں دو سال تک کی توسیع ہو سکے گی۔جس کے لیے معاہدہ ملازمت، سی وی، کمپنی ، لیٹر، پروفائل اور ایس ای سی پی رجسٹریشن لازمی قرار دئیے گئے ہیں۔اس کے ساتھ ساتھ طویل مدتی ورک ویزا کے لیے سیکیورٹی کلیئرنس ، سرمایہ کاری بورڈ کا لیٹر لازمی ہو گا۔اس کے علاوہ حصول تعلیم کے لئے پاکستان آنے والے غیرملکیوں کو 2 سال کا ویزا جاری کیا جائے گا، اسٹڈی ویزا کے لئے سیکیورٹی اداروں کی کلیئرنس اور این او سی پیش کرنا لازی قرار دیا گیا ہے۔واضح رہے کہ شیخ رشید نے وزارت داخلہ کا قلمدان سنبھالنے کے بعد اپنے ماتحت اداروں میں بڑی تبدیلیوں کے اعلانات کئے تھے اور انہوں نے آن لائن ویزا جاری کرنے کا اعلان بھی کیا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *