فائرنگ سے زخمی ہونے والا علی شیر رحمانی بھی جاں باز نہ ہو سکا

گزشتہ روز ہونے والے واقعہ میں
ننکانہ صاحب واربرٹن تھانہ میں دو پارٹیوں کی آپس میں دوران تفتیش جھگڑا ہوا تھا مخالف گروپ نے دیدہ دلیری سے فائرنگ کر دی ایک موقع پر ہلاک اور دوسرا علی شیر رحمانی جو کہ زخمی حالت میں ہسپتال میں زیر علاج تھا مگر آج اپنے خالقے حقیقی سے جا ملا ۔اہل علاقہ میں خوف وہراس پھیل گیا،جب تھانہ کے اندر عام آدمی محفوظ نہیں،تو باہر کیسے محفوظ رہ سکتا ہے شہریوں میں شدید غم وغصہ پایا جانے لگا۔تفصیلات کے مطابق ننکانہ صاحب کے علاقہ تھانہ واربرٹن میں ایک ایسا واقع رونما ہوا کہ وہاں کے رہائشیوں کو خوف نے ہلا کر رکھ دیا کہ محافظوں کی موجودگی میں اور اتنی ساری فورس ہونے کے باوجود ملزمان اور مدعی پارٹی اسلحہ کیسے لے کر تھانہ چلے گئے اور دوران تفتیش نامعلوم شخص نے فائرنگ کر دی جس سے مراتب علی ولد عاشق حسین سکنہ جیسل موقع پر ہلاک،اور دوسرا علی شیر ولد ابرار احمد رحمانی سکنہ واربرٹن جو کہ ذخموں کی تاب نہ لاتے ہوے جان کی بازی ہار گیا، ۔۔پولیس نے ڈر کی وجہ سے تھانہ بند کر دیا۔ اہل علاقہ نے آئی جی پنجاب،اور ڈی آئی جی شیخوپورہ رینج سے اپیل کی ہے کہ تھانہ واربرٹن میں پولیس کی ناقص حکمت عملی اور بوڑھے اور کمزور تھانیداروں کی وجہ سے واربرٹن تھانے کے حالات ایسے ہوئے ہیں ان کو فی الفور بدل کر نئے اور جوان پولیس آفیسر تعینات کیے جائیں۔تاکہ دوبارہ ایسے حالات پیدا نہ ہو سکی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *