عمران خان صاحب نے کہا تھا کہ میرے علاوہ کوئی اور آپشن نہیں ہے کیا ان کرپٹ لوگوں کو وزیراعظم بناؤ گے

اسلام آباد اصل میں منجی تھلے ڈانگ پھیرنے کا وقت اب آیا جس کے بارے میں فردوس عاشق اعوان نے بہت پہلے بے وقت کی راگنی الاپی تھی اس کا اصل مصرف اب سامنے آیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان منجی تھلے ڈانگ پھیریں اور گندے انڈوں کا صفایا کریں۔ اعتماد کا ووٹ لینے کا فیصلہ تو عمران خان نے کر لیا ہے مگر یہ ان لوگوں کی چاندی کا موقعہ ہے کہ جو شیروانی پہننے کے لیے”اتاولے“ہوئے جا رہے تھے اور ا سکے لیے کافی عرصے سے منصوبہ بندی کرنے کے ساتھ ساتھ بیک ڈور رابطوں میں بھی مصروف تھے۔
پی ٹی آئی پر اس وقت مشکل ترین وقت آ چکا ہے کہ ان کی جماعت کے کئی لوگوں نے بغاوت کر دی ہے جس وجہ سے سینیٹ میں بھی انہیں اپ سیٹ ہوا ہے اور اب عدم اعتماد کی تحریک میں بھی نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے۔تاہم اس موضوع پر روشنی ڈالتے ہوئے سینئر صحافی اور تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد مسعود نے اپنے پروگرام میں بات کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کی جماعت میں کرپٹ لوگ بہت زیادہ ہیں اور وہ ان کی جگہ پر وزیراعظم بننے کے لیے تیار ہیں اور ان لوگوں سے متعلق وزیر اعظم عمران خان کو پتا ہونا چاہیے کہ ماضی میں کون کون سے لوگ وزیراعظم بننے کا خواب دیکھتے رہے ہیں اور وہ دوسری پارٹیوں سے پی ٹی آئی میں شامل ہوئے ہیں۔اس حوالے سے عمران خان صاحب کو ایجنسیوں کی سہولت حاصل کرنی چاہیے اور ساری انفارمیشن لینی چاہیے۔عمران خان صاحب کو اگر خطرہ ہے تو ان کی اپنی صفوں کے اندر سے ہے اور ان کی کیبنٹ میں الیکٹڈ اور نان الیکٹڈ کئی لوگ وزارت عظمیٰ کے لیے خواہشمند ہیں۔خان صاحب نے بھی ماضی میں ایسے ہی لوگوں کے بارے میں کہا تھا کہ میرے علاوہ کوئی اور آپشن نہیں ہے کیا ان کرپٹ لوگوں کو وزیراعظم بناؤ گے۔اب وہ سبھی لوگ ایکٹو ہیں اور ایک صفحے کے پیچھے انہوں نے پناہ لے رکھی ہوئی ہے اور عمران خان کو ان سب لوگوں پر نظر رکھنی چاہیے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *