ارکان پنجاب اسمبلی نے گندم کا ریٹ دو ہزار فی من مقرر کرنے کا معاملہ سپیکر کے سامنے اٹھا دیا

اٹھارویں ترمیم کے بعد فصلوں کی پیداواری قیمت مقرر کرنے میں صوبے بااختیا رہیں‘ چوہدری پرویز الٰہی کسانوں کی خوشحالی کیلئے گندم کی پیداواری قیمت دو ہزار روپے فی من مقرر کرنے کا معاملہ کابینہ میں اٹھایا جائے‘ سپیکر کی حکومت کو ہدایت کرپشن کے خلاف تھے اور رہیں گے ،کسی نیب زدہ او رکرپٹ کو پی اے سی ون کا چیئرمین مقرر نہیں کر سکتے ،وزیر قانون راجہ بشارت

 

سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے گندم کی پیداواری قیمت 2ہزار روپے مقرر کرنے کا معاملہ کابینہ میں اٹھانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہے یوکرائن کے کسان نہیں صرف اپنے کسانوں کی ہی بہتری ہونی چاہیے ،کسانوں کے ووٹوں سے ہی آپ کی حکومت بنی ہے، بجلی کے ریٹ کئی گنا بڑھ گئے ہیں، ہمارا کسان معاشی طور پر مسائل کا شکار ہے، کسانو ں کیلئے ہر چیز مشکل ہو رہی ہے۔
پنجاب اسمبلی کا اجلاس گزشتہ روز بھی مقررہ وقت کی بجائے ایک گھنٹہ پچاس منٹ کی تاخیر سے سپیکر چوہدری پرویز الٰہی کی صدارت میں شروع ہوا ۔صوبائی وزیر سردار محسن لغاری نے محکمہ آبپاشی سے متعلق سوالات کے جوابات دئیے ۔اجلاس میں ارکان اسمبلی نے گندم کا ریٹ دو ہزار فی من مقرر کرنے کا معاملہ سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویزالٰہی کے سامنے اٹھایا۔
ارکان پنجاب اسمبلی نے استفسار کیا کہ اسمبلی کی منظوری کے باوجودپنجاب حکومت گندم کا ریٹ دو ہزار روپے فی من مقرر کیوں نہیں کر رہی جس پر سپیکر نے کہا کہ سندھ کے کسان کو گندم کا ریٹ دو ہزار روپے فی من مل رہا ہے، یوکرائن کے کسان نہیں صرف اپنے کسانوں کی ہی بہتری ہونی چاہئے۔ پنجاب کے کسان کا کیا قصور ہے، کسانوں کے ووٹوں سے ہی آپ کی حکومت بنی ہے، بجلی کے ریٹ کئی گنا بڑھ گئے ہیں، ہمارا کسان معاشی طور پر مسائل کا شکار ہے، کسانو ں کیلئے ہر چیز مشکل ہو رہی ہے، اسکی معاشی حالت بہت خراب ہے۔
سپیکر نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد فصلوں کی پیداواری قیمت مقرر کرنے میں صوبے بااختیا رہیں۔ سپیکر نے حکومت کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کسانوں کی خوشحالی کیلئے گندم کی پیداواری قیمت دو ہزار روپے فی من مقرر کرنے کا معاملہ کابینہ میں اٹھایا جائے جس پر وزیرقانون محمد بشارت راجہ نے سپیکر کو یقین دہانی کروائی کہ کسانوں کے مسائل اور بہتری کو مدنظر رکھتے ہوئے گندم کی قیمت مقرر کرنے کیلئے سپیشل کمیٹی کی سفارشات کی روشنی میں ایوان کی متفقہ منظوری کو کابینہ میں پیش کیا جائے گا۔
بعد ازاں رکن اسمبلی طاہر خلیل سندھو نے نشاندہی کی کہ کرسمس کے موقع پر مسیحی برادری کو آپ کے دورِ حکومت میں تنخواہیں 10 دسمبر کو ہی دے دی جاتی تھی لیکن موجودہ حکومت نے دسمبر کی تنخواہ ابھی تک ریلیز نہیں کی جس پر سپیکر چودھری پرویزالٰہی نے وزیر قانون محمد بشارت راجہ کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ کرسچن کمیونٹی کے سرکاری ملازمین کو فوری طور پر تنخواہیں دی جائیں۔
سپیکر چودھری پرویزالٰہینے لاہور کی صفائی سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ لاہور کی صفائی کے نظام میں بہتری لائی جائے۔ وزیرقانون راجہ بشارت نے کہا کہ آپ کی آبزرویشن بالکل درست ہے، ترک کمپنی کے ساتھ معاہدہ ختم ہونے پر نئی کمپنی کے ساتھ معاہدہ کر لیا گیا ہے دو دن میں صفائی کے نظام میں بہتری نظرآئے گی۔ اجلاس میںلیگی رکن اسمبلی سمیع اللہ خان اور راجہ بشارت کے درمیان گرما گرمی بھی ہوئی ۔
سمیع اللہ خان نے گوجرانوالہ سے (ن) لیگ کے رہنما خالد بٹ کے گھر میں پولیس کے چھاپے کی نشاندہی اورنیب ،ایف آئی اور اینٹی کرپشن کی کارروائیوں مذمت کی اور کہا کہ چالیس سے پچاس پولیس والوں نے چادر اورچار دیواری کا تقدس پامال کیا،موجودہ حکومت نے گورننس کے بجائے انتقام کا راستہ اختیار کیاہواہے ، احتساب کے دو ہی ادارے ہیں پی اے سی ون اور پی اے سی ٹو لیکن ڈھائی سال سے پی اے سی ون تشکیل نہیں پا سکی، مستقبل میں خدشہ ہے کوئی بھی پی اے سی ون کا چیئرمینتشکیل نہیں پا سکے گا، آپ کو پتہ ہے کہ اسمبلی میں کتنے نیب زدہ لوگ بیٹھے ہیں۔
وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا کہ اپوزیشن نے بات کی ہے کہ ابھی تک پی اے سی ون کے چیئرمین کی تشکیل نہیں ہوسکی یہ حکومت ایسی روایت ڈال رہی ہے کہ شاید آئندہ کے لئے پی اے سی کی تشکیل نہ ہوسکے میں دعا کرتاہوں اللہ تعالیٰ سے کہ ایسے کرپٹ حکمران نہ لائے جن کو پی اے سی ون کی چیئرمین شپ دی جاسکے ۔ اگر اس وقت تک کسی کو پی اے سی ون کا چیئرمین نہیں بنایا گیا کہ نیب زدہ شخص جو نیب میں پیشیاں بھگت رہا ہو اس کو پی اے سی ون کا چیئرمین بنا دیں ۔
نیب زدہ شخص کو پی اے سی ون کا چیئرمین نہیںبنا سکتے ۔ اگر شہباز شریف قومی اسمبلی کی پی اے سی سے استعفیٰ دے سکتے ہیں تو حمزہ شہباز کیوں اس عہدے کی ضد نہیںچھوڑ سکتے۔پنجاب اسمبلی پنجاب کے اجلاس میں عوامی مفاد عامہ کی سات قراردادیں پیش کیں گئی جن میں سے تین منظور ، تین مسترد جبکہ ایک واپس لے لی گئی ۔اجلاس کا ایجنڈے مکمل ہونے پر پینل آف چیئرمین میاں شفیع محمد نے اجلاس غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کر دیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *